(چاند کا ٹکڑا (افسانہ

chand ka tukra

15 thoughts on “(چاند کا ٹکڑا (افسانہ

  1. Muhammad Azam Khan-

    Yeh mehz aik umda afsana he nahi aik haqeeqat bhee hai kiunkeh her maa ko apni aulad sub se khoobsurat dekhai daiti hai khwa dunia kee nazroon main woh kitni he badsurat ho.

  2. Mubashar Ahmad

    بہت خوبصورت لیکن دکھ بھرا افسانہ لکھ کر آپ نے معاشرے کے ایک نہائت اہم اور نہائت بدصورت پہلو کو قارئین کے سامنے رکھا ہے آپ نے۔ مجھے امید ہے کہ بہت سے قارئین جب کسی نورے سے ملے گیں تو شائد قدرتی کمزرویوں کا مذاق اڑانے کی بجائے نورے کو عزت اور احترام کا کم از کم وہ مقام ضرور دیں گے جو کہ ہر ایک شخص کا بنادی حق ہے۔
    بہت بہت شکریہ

  3. سلمان امین

    Gul Sahib kamal ka likha hey aap ne aik bohat hi hassas topic par.

  4. Muhammad Awais

    Gul bhai kamal ka likha hai. Simply awesome.

  5. Noor

    بہت ہی عمدہ اور خوبصورت افسانہ لکھا ھے بھیا۔ میں سوچ رہی ہوں ۔افسانے لکھنا چھوڑ دوں۔ آپ تو مجھے شرمندہ کرنے پر تلے ہیں اب۔

    1. Gull Post author

      hahahaha…agar aisi dhamkiayan daini hain to mera khayal hai main likhna chor daita hon. thx for comments 🙂

  6. haiderbutt06

    har afsana naya sehar chor jata hai…. buhat e umda……

  7. Umer

    Such things worth being added to list of mandatory readings for young generations.
    Great writing.

  8. Rizwan Abbas

    Bara Tez Ae… 🙂
    GUL BHAI Bohaat Khooob …!

Comments are closed.